advertisement

یہ نشانی آپ میں ہے تو آپ کو یہ بیماری ہونے والی ہے

ناظرین جس طرح نئی نئی بیماریاں پیدا ہو رہی ہیں اسی طرح سے کینسر جیسی خطرناک بیماری بھی کی عام ہوتی جا رہی ہے اور یہ بیماری آپ کے جسم میں اس وقت ہی پیدا ہوتی ہے جب آپکی باڈی میں فری ریڈیکلز کا ڈیمیج بڑھنے لگتا ہے اور اس کی خرابی کی وجہ سے ڈی این اے میں بھی رکاوٹ پیدا ہو جاتی ہے جس کی وجہ سے آپ کے جسم میں کینسر سیل پیدا ہوتے جاتے ہیں . کینسر کی یہ بیماری مختلف قسم سے پیدا ہونے لگتی ہے عام طور پر یہ بیماری بریسٹ کینسر ، لنگز کینسر ،برین کینسر ،بلڈ کینسر کی شکل میں اور جسم کے اور حصّوں پر بھی اثر انداز ہوتی ہے۔

جب آپ کے جسم میں کینسر کی ابتدا ہوتی ہے اس وقت کچھ علامات اور وجوہات ظاہر ہونے لگتے ہیں اور جو لوگ ان اشاروں کو نظر انداز کر دیتے ہیں. ان ہی لوگوں کو ان خطرناک بیماریوں میں مبتلا ہونا پڑھتا ہے کیونکہ ان کو اس بیماری کا اس وقت پتا چلتا ہے جب یہ بیماری ان کے جسم میں پوری طرح حملہ کر چکی ہوتی ہے اور ایسی حالت میں دوا کھانےکے علاوہ اگر مکمل علاج بھی کرایا جائے تو اس میں بہتر نتائجدیکھنے کو نہیں مل پاتےاور اس کو ٹھیک کرنا بہت زیادہ مشکل ہو جاتا ہے کینسر کی بیماری ایسی بیماری ہے جو اپنے ساتھ اور بھی خطرناک بیماریوں کو پیدا کرتی ہے. اور اس کے سیل میں اضافہ ہوتا چلا جاتا ہے جس کی وجہ سے یہ انسانی جسم کو کھوکلا بناتے جاتے ہیں اور کینسر کو کنٹرول کرنا بہت ہی زیادہ مشکل ہو جاتا ہے اس کے علاوہ ہم اپنی روز کی زندگی میں ایسی چیزوں کا استعمال کر رہے ہیں جو ہمارے جسم میں کینسر کو پیدا کرتی ہیں .جان لیتے ہیں وہ کونسی چیزیں ہیں اور کینسر کی ابتدائی علامات کیا ہے اور ہم کیسے کینسر جیسی خطرناک بیماری کا پتا لگا سکتے ہیں. تھکاوٹ کی وجہ سے اور موسم میں تبدیلی کی وجہ سے عام بخارتو ہر انسان کو ہی آجاتا ہے لیکن جب بخار لمبے ارصے سے ہی چلا آرہا ہو یہ بھی خطرے کی علامات میں سے ایک ہے کیونکہ اس قسم کے بخار میں دوا سے بھی کوئی اثر دیکھنے کو نہیں ملتا

اور یہ مسلہ واضح طور پر یہ اشارہ کرتا ہے .کہ آپ کےجسم میں کینسر سیلز پیدا ہونے کے امکانات بھی بڑھ چکے ہیں کیونکہ اس کی وجہ سے نہ صرف جسم میں بخار رہتا ہے بلکہ جسم کے مختلف حصّو ں میں انفیکشن بھی بڑھتا چلا جاتا ہے. اگر آپ بھی اس قسم کی کنڈیشن سے متاثر ہیں تو آپ کو کینسر سے بچنے کے لئے مکمل چیک اپ کرانے کی ضرورت ہے .کہ کہیں آپ کے جسم میں بھی کینسر سیل تو پیدا نہیں ہوچکے ایسے لوگ جو جسمانی کمزوری کا شکارہوتے ہیں ان کو زیادہ سخت محنت کرنے کی وجہ سے تھکاوٹ اور پریشانی کے علاوہ جسم میں درد کے مسلےمیں بھی مبتلا ہونا پڑتا ہے لیکن اگر یہ مثلا کافی وقت سے چلا آرہا ہے تو یہ خطرے کا باعث بھی بن سکتا ہے. کیونکہ جب بھی جسم میں تھکاوٹ یا کمزوری ہو تو یہ تھوڑی دیر آرام کرنے کے بعد با آسانی ٹھیک ہو جاتی ہے اور جسم میں سکوں اور راحت بھی ملنے لگتی ہے لیکن اگر آپ کو ہر وکٹ جسم کمزوری یا مستقل تھکاوٹ محسوس ہو تو آپ کو فکر مند ہونے کی ضرورت ہے کیونکہ یہ کینسر کی خطرناک علامات میں سے ایک ہے. کھانسی کے پرانے مسلے میں دوا سے کوئی فرق نہ پڑھنا سینے میں جلن اور اچانک سینے میں درد کا ہونا یہ تینوں صورتیں اکھٹی پیدا ہو جاتی ہیں جن کو اگر در گزر کیا جائے تو خطرناک بیماریاں پیدا ہو جاتی ہیں کیونکہ زیادہ تر لوگ اس طرح کے مسلے کو نظر انداز کر دیتے ہیں جو کے صحت کے لئے اچھا نہیں .

ناخنوں کا کمزور ہو کر تیزی سے ٹوٹنا بھی پریشانی میں مبتلا کر سکتا ہے عام طور مرد اور خواتین دونو ں میں ہی ناخنو ں کی خرابی اور اس میں پیدا ہونے والی بیماریاں جسم میں Minerals’ کی کمی کی وجہ سے ہی پیدا ہوتی ہیں لیکن جسم میں ان کی کمی نہ ہونے کے با وجود بھی ناخن بہت زیادہ ٹوٹنے لگیں تو یہ مسلہ واضح طور پر اس بات کی طرف اشارہ کرتا ہے کہ آپ کے جسم میں cancer cell پیدا ہونے کےچانس بڑھ چکے ہیں اس کے علاوہ اس بات سے آگاہی حاصل کرنا بھی بے حد ضروری ہے کہ کون کون سی ایسی چیزیں ہیں جو کینسر کو پیدا کرنے کا باعث بن سکتی ہیں عام طور پر لوگ پاپ کارن بہت ہی شوق سے کھاتے ہیں لیکن Scientific Research سے یہ بات ثابت ہو چکی ہے کہ پاپ کا رن کھانے کی عادت آپ کے جسم میں کینسر سیلز کے پیدا کرنے کے خطرے کو بڑھا دیتی ہے جس طرح دوسرے آئل قدرتی طریقے سے حاصل کر لئے جاتے ہیں جس میں زیتون کا تیل اور مسٹرڈ آئل لیکن Hydrogenated آئل کو نیچرل طریقے سے حاصل نہیں کیا جاتا بلکہ اس کے اندر کیمکل کی بہت زیادہ مقدار پائی جاتی ہے. اس لئے یہ آئل ہماری صحت کے لئے انتہائی خطرناک ہے یہ آئل زیادہ تر پیکنگ میں ملنے والی چیزوں میں استعمال کیا جاتا ہےجو کے کینسر کا سبب بنتی ہیں اس کے علاوہ آپ آرٹیفیشل میٹھی چیزیں اور ٹماٹر کے بیج کھانے سے بھی اجتناب کریں کیونکہ یہ بھی آپ کے جسم میں کینسر سیلز کو پیدا کرنے کی بنیادی وجہ بن سکتے ہیں .

advertisement

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*